ذکر خفی  ایک روحانی عمل ہے جو مخصوص اللہ کے ناموں، مناجاتوں، یا آیات کو خاموشی سے یا آہستگی سے ذکر کرنے کا عمل ہے۔ یہ عمل عموماً میں دل کے اندر اور اکثر اپنے لئے کیا جاتا ہے۔ ذکر خفی کے ذریعے، انسان اپنے اندری خدا کے ساتھ کنواں رابطہ برقرار کرتا ہے اور اپنی روحانیت کو تقویت دیتا ہے۔

ذکر خفی میں عموماً دو طریقے استعمال کیے جاتے ہیں:

1. ذاتی ذکر خفی: یہ وہ ذکر ہے جو اکثر شخص اپنی روزمرہ کی زندگی میں کرتا ہے۔ یہ ذکر خاموشی میں کیا جاتا ہے، جیسے کہ دل کے اندر آواز نہیں بلکہ صرف سوچ میں کیا جاتا ہے۔ ایک شخص اپنی ذاتی روحانیت اور ایمان کے مابین خصوصی رابطہ برقرار کرنے کیلئے اس ترکیب کو استعمال کرتا ہے۔

2. خفی جماعتی ذکر: یہ ذکر جماعتوں یا خصوصی محفلوں میں کیا جاتا ہے جہاں لوگ مل کر خفی طور پر اللہ کے ناموں یا مناجاتوں کا ذکر کرتے ہیں۔ یہ طریقہ عموماً مریدین کی مشاہدت اور روحانی رہنمائی کے تحت کیا جاتا ہے۔ اس طریقے کو استعمال کرتے ہوئے، جماعت کی روحانی قوت بڑھتی ہے اور افراد ایک دوسرے کی تعلیم و تربیت میں مدد کرتے ہیں۔

ذکر خفی کا مقصد ایک خاص روحانیت کو برقرار رکھنا ہے اور انسان کو اپنے خدا کے نزدیک تر کرنا ہے۔ اس کے ذریعے، انسان روحانی طور پر تقویت پاتا ہے اور اپنی روحانی راہ کو پیدا کرتا ہے۔

قرآن و حدیث میںذکر خفی کے بارے میں کئی آیات اور احادیث موجود ہیں۔ یہاں کچھ اہم دلائل پیش کیے جا رہے ہیں:

1. قرآن میں اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں: “یَا أَیُّهَا الَّذِینَ آمَنُوا اذْکُرُوا اللَّـہَ ذِکْرًا کَثِیرًا” (سورة الأحزاب، الآیة ۴۱)، جس کا مطلب ہے: “اے ایمان والو! اللہ کا بہت زیادہ ذکر کرو۔” یہ آیت امرِ زکر کو عمومی طور پر بیان کرتی ہے، جو ظاہر کرتی ہے کہ زکر کا عمل ایمان والوں کے لئے ضروری ہے۔

2. حدیث میں رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: “أَفْضَلُ الذِّکْرِ لَا إِلَهَ إِلَّا اللَّهُ” (رواہ الترمذی)، جس کا مطلب ہے: “پر اﷲ کے سوا کوئی معبود نہیں کی سب سے بہترین ذکر لا الہ الا اللہ ہے”۔ یہ حدیث زکر خفی کے لئے اہم ہے، جو اللہ کے نام کو خاموشی میں ذکر کرنے کو بیان کرتی ہے۔

3. دیگر آیات میں بھی زکر کے اہمیت کا ذکر کیا گیا ہے، جیسے:
– “وَاذْکُر رَّبَّکَ فِی نَفۡسِکَ تَضَرُّعًۢا وَخِیفَةًۢ وَدُونَ الۡجَہۡرِ مِنَ الۡقَوۡلِ بِالۡغُدُوِّ وَالۡاٰصَالِ وَلَا تَکُنۡ مِّنَ الۡغٰفِلِیۡنَ” (سورة الآراف، الآیة ۲۰۵)، جس کا مطلب ہے: “اور تضرع اور خوف کے ساتھ اپنے رب کا ذکر کرو اور صبح و شام کے وقت ظاہری طور پر نہیں بلکہ خفیہ طور پر بولو اور غافلوں کی قسم میں نہ ہو”۔
– “وَالذّٰکِرِیۡنَ اللّٰہَ کَثِیۡرًا وَّالذّٰکِرٰتِ اَعَدّللّٰہُ لَہُمۡۡ مَّغۡفِرَۃٌ وَّاَجۡرٌ عَظِیۡمٌ” (سورة الآحزاب، الآیة ۳۵)، جس کا مطلب ہے: “اور بہت زیادہ اللہ کا ذکر کرنے والے مردوں اور عورتوں کے لئے مغفرت ہے اور بہت بڑا اجر ہے”۔

یہ دلائل ذکر خفی کی اہمیت اور مستحبیت کو ظاہر کرتے ہیں۔ ذکر خفی اللہ کے ناموں، مناجاتوں، یا آیات کو خاموشی سے یا آہستگی سے ذکر کرنے کا عمل ہے جو قرآن و حدیث میں تشویش کی بنا پر بیان کیا گیا ہے۔

بعض اور قرآنی آیات اور حدیثیں جو ذکرخفی کی اہمیت کو ظاہر کرتی ہیں:

4. قرآن میں اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں: “وَاذْكُر رَّبَّکَ حِينَ تَنسَىٰ” (سورة الكهف، الآیة ۲۴)، جس کا مطلب ہے: “اور جب تم بھول جائو تو اپنے رب کا ذکر کرو”۔ یہ آیت ذکر کی اہمیت کو ظاہر کرتی ہے، حتیٰ کہ جب انسان بھول جاتا ہے یا غافل ہو جاتا ہے، تو زکر اس کو راہنمائی کرتا ہے۔

5. حدیث میں رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: “مَا مِنْ عَبْدٍ يَذْكُرُ اللَّهَ تَعَالَى فِي نَفْسِهِ إِلَّا رَفَعَ اللَّهُ لَهُ دَرَجَةً” (رواہ مسلم)، جس کا مطلب ہے: “کوئی بندہ اپنے دل میں اللہ تعالیٰ کا ذکر کرے، تو اللہ اس کی مقامت میں اس کی درجہ بلند کرتا ہے”۔ یہ حدیثذکر خفی کی فضیلت اور اس کے برکات کو ظاہر کرتی ہے۔

6. قرآن میں اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں: “إِنَّ اللَّـهَ یُحِبُّ الَّذِینَ یُقَاتِلُونَ فِی سَبِیلِهِ صَفًّا کَأَنَّهُم بُنْیَانٌ مَّرْصُوصٌ ۚ وَإِذْ قَالَ مُوسَىٰ لِقَوْمِهِ یَا قَوْمِ لِمَ تُؤْذُونَنِی وَقَدْ تَعْلَمُونَ أَنِّی رَسُولُ اللَّـهِ إِلَیْکُمْ ۖ فَلَمَّا زَاغُوا أَزَاغَ اللَّـهُ قُلُوبَهُمْ ۚ وَاللَّـهُ لَا یَهْدِی الْقَوْمَ الْفَاسِقِینَ” (سورة الصف، الآیات ۴-۵)، جس کا مطلب ہے: “بے شک، اللہ وہ لوگوں کو پسند کرتا ہے جو اس کی راہ میں صفوں کی شکل میں لڑتے ہیں، جیسے کہ وہ قائمفضیلت اور اہمیت کا ذکر کرتے ہیں۔ یہ آیات ظاہر کرتی ہیں کہ ذکر خفی اللہ کی محبت کو جیتنے کا ایک طریقہ ہے اور اس کے لئے اللہ تعالیٰ اپنی رحمتوں کو نازل کرتا ہے۔

اختتامی طور پر، ذکر خفی ایک مستحب عمل ہے جو قرآن و حدیث میں زیادہ سے زیادہ آیات اور احادیث کی روشنی میں بیان کیا گیا ہے۔ یہ اللہ تعالیٰ کی محبت، رحمتیں، برکات اور مغفرتوں کو حاصل کرنے کا ایک طریقہ ہے۔ زکر خفی کرنا ایک معبودی عمل ہے جو ایمان والوں کے لئے ضروری ہے۔

Share.